Imatge invisible per fer click
Dis, 01/02/2020

لوگوں سے نہ ڈریں اپنے اللہ سے ڈریں, بدنامی سے ڈر کر اپنی عزت کسی کے حوالہ نہ کریں اپنے ساتھ ہونے والی جنسی استحسالی کے خلاف آواز اٹھانے سے عزت کم نہیں ہوگی بلکہ عزت بچے گی !!

بارسلونا کا شمار یورپی ممالک کے ایک خوبصورت اور اہم شہروں میں ہوتا ہے ۔ یہاں بیک وقت اسپین اور کتالونیا کی حکومتیں قائیم ہیں۔ مقامی آبادی کے ساتھ ساتھ بہت سارے دوسرے مذاہب، ثقافتوں اور رنگ و نسل کے خواتین وحضرات رہتے اور کام کرتے ہیں۔ باقی یورپ کے شہروں کی بنسبت یہاں کا موسم خوشگوار اور ضروریات زندگی مناسب قیمتوں میں دستیاب ہیں۔ یہاں کے لوگ انسانی تکلیفوں پریشانیوں اور سیاسی ناکامیوں اور کرپشن ، دیگر وجوہات کی وجہ سے مہاجرین کی جدوجہد اور نقل مکانی کو دیگر ممالک میں بسنے والے لوگوں کی طرح اپنے لئے خطرہ نہیں سمجھتے بالکہ انکی مدد اور معاونت کرنے پر فخر محسوس کرتے ہیں۔ واضح رہے کہ سب لوگ ایک جیسے نہیں ہوتے دونوں طرف سے اکہ دکہ نا انصافی اور نسل پرستی کے واقعات سر زرد ہوتے رہتے ہیں۔
پاکستانی تارکین وطن کی تعداد کا شمار بارسلونا میں مقیم دوسری ثقافتوں میں سب سے زیادہ ہوتا ہے۔اسی لئے ہماری اہمیت بھی سماجی اور سیاسی طور پر دیگر تارکین وطن آبادی سے زیادہ ہے۔ عام طور پر پاکستانی مرد پہلے اسپین آتا ہے اور کچھ سالوں بعد اپنے قدم جمانے کے بعد اپنی فیملی کو اپنے ساتھ رہنے کیلئے بلوا لیتا ہے ۔ بعض اوقات قابلیت اور ہنر کے مطابق مناسب اور مستقل کام نہ ملنے کی وجہ سے ڈاکومنٹس کو قانون کی لازمی شرائط کے مطابق رکھنے کیلئے درجنوں لوگوں کے مشورہ مان کر اپنے لئے مزید مشکلات کھڑی کرلیتے ہیں۔ اپنے قانونی مسائیل اور پیچیدگیاں اپنے جیون ساتھی کو بتانے کے بجائے جھوٹی تسلیاں یا جھوٹی ڈیکلیریشن پر شارٹ کٹ لے کر اپنی فیملی کو اپنےپاس بلوا لیتے ہیں اور فیملی کے آنےکے بعد انکی ضروریات پوری کرنے میں ناکامی کی بدولت گھریلو لڑائی جھگڑے اور بعض اوقات پولیس تھانہ اور عدالت تک پہنچے کے بعد فیملی کو قانونی تحفظ میں کچھ مہینہ یا دوسال تک رہنا پڑتا ہے ۔ میاں بیوی کے آپسی فاصلہ نظریہ ضرورت اور ماحول میں تبدیلی کے باعث آداب رویہ اخلاقیات اور قدروں میں بھی تبدیلی واقع ہو جاتی ہے۔ گھر والے تو پہلے جہاں تھے آج بھی وہاں ہی ہیں ہاں کچھ امیدیں ضرور وابسطہ کرلیں ہیں اب جو بھی کچھ جھیلنا ہے وہ تارکین وطن کو ہی بھگتنا ہے۔

کچھ باشعور بیویاں اور بیٹیاں بارسلونا آنے کے بعد اپنے گھر کی معیشت بہتر بنانے کیلئے جہاں بھی جو بھی کام ملتا ہے فوری طور ہر شروع کردیتی ہیں جس سے انکے گھر کے حالات میں خاطر خواہ بہتری آتی ہے اور تقلید میں اور خواتین بھی کام کی تلاش میں تیار ہوجاتی ہیں ۔ یہاں تک تو سب ٹھیک ہے مگر سب سے بڑا المیا یہ ہے کہ بارسلونا میں بولنے اور سجھنے والی دونوں زبانوں اسپینش اور کتالان کو سیکھے بغیر لوکل قوانین سے عدم واقفیت اورعلاقہ حدود حربہ راستہ اور ٹرانسپورٹ کے استعمال کو جانے بغیر پہلے سے آباد امیر بااثر پاکستانی تاجران کے پاس کام شروع کردیا۔ اوراگر رات کو کام کرتے ہوئے دیر ہوگئی تو کسی ساتھ کام کرنے والے مرد سے میٹرو یا ٹیکسی میں ساتھ چلنے کی درخواست اسی طرح کام پر نروس رہنے پر کوئی غلطی سرزرد ہو جانے پر مرد ساتھی کی مدد اور پشت پناہی یا غلطی چھپانے یا ٹھیک کرنے پر احسان مند ہونا ماہواری کے دنوں میں شدید پیٹ کے درد اورنقاہت میں مرد ساتھی کی کام میں ساپورٹ بعض اوقات ماہواری اپنی روٹین کی تاریخ سے پہلے آگئی انڈر وئیر گندی ہو گئی اور علاقہ کی کمرشل دوکانوں سے ناواقفیت کی وجہ سے اپنے مرد ساتھی سے گزارش کردی کہ میرے ساتھ نزدیک کی کسے انڈر گارمینٹ کی دوکان پر چلییں اور وہاں سے اپنے پیسوں سے خود سے اپنے لئے اپنی انڈروئیر کے علاوہ کچھ اور ضرورت کی چیزیں بھی لے لیں کیونکہ روزانہ کام ختم ہونے کے بعد ساری دوکانیں بند ہوتی ہیں وغیر وغیرہ اب مرد ساتھی کو جو کہ شادی شدہ اور بال بچہ دار ہے اپنی خاتون ورکر ساتھی کی ماہوواری کی تاریخ کا علم ہوگیا اور ذہانت اورقدرتی یا ذاتی دلچسپی کی باعث تاریخ ذہن نشین بھی کرلی اس کے علاوہ کبھی کبھی کام کے درمیان بات چیت کرتے ہوئے روزانہ گھر کی چیدہ چیدہ روزمرہ امور کی معلومات بھی مل گئیں-
اب میر ے پیارے دوستوں بھائیوں اور بھائیوں اور بیٹوں کے نام سے فیس بک بنانے والی بہنوں آپ ہی بتائیں کہ لڑکی پر یہ سب احسان ادا کرنے کے بعد کیا اس مرد ورکر کو لائیسنس مل گیا ہے کہ وہ کام کرتی اس لڑکی کو چھو سکے یا اسکا بلاوجہ یچھا کرسکے یا اسکو آگے پیچھے سے چمٹا سکے ؟

تعلیم یافتہ اعلی گھرانے سے تعلق ضرورت مند ضرور، مگر انتہائی ایماندار شریف اور محنتی اور اس کے کام کی جگہ کوئی دوسری عورت ورکر نہیں مالک اور دیگر ورکرسب کے سب مرد البتہ کلائینٹس میں مرد خواتین اور بچے بھی ہوتے ہیں اور خاتون ورکر کی موجودگی کو سب بہت پسنددیدگی سے دیکھتے ہیں۔

اب یقینا بہت سارے بھائی لوگ اور بہنیں یہ پوسٹ پڑھکر سوچ رہے ہونگے کہ یہ ڈاکٹر ہما کس لڑکی کی بات کررہی ہیں یہ کون ہے ذرا جان پہچان نکالیں- سارا قصور اس لڑکی کا ہے وہ انڈر وئیر خریدنے اس ساتھ کام کرنے والے مرد کے ساتھ کیوں گئی کس نے کہا تھا ایسی نوکری کرنے کو جس میں کبھی کبھی رات گئے تک کام کرنا پڑے یا اتنی بہادر ہوتی کہ اکیلی گھر جا سکتی وغیرہ وغیرہ کوئی بھی وجہ ہو جتنی مرضی بے تکلفی ہو اعتماد ہو یا بھروسہ مگر ایک عورت مرد کو یا مرد عورت کو عورت عورت کو یا مرد مرد کوآپسی رضامندی کے بغیر چھو نہیں سکتے غلطی سے ٹکرانے کی ایک دفعہ چھوٹ ہوسکتی ہے جسکی معزرت ضروری ہے اور آئیندہ کے لئے خبر دار کرنا لازم ہے بارسلونا کے مردو، پاکستانی خواتین کے ساتھ عزت اور برابری کی سطح پر کام کرنا سیکھ لیں ورنہ یہاں کا قانون اور جیلیں آپ کی منتظر ہیں اور نتیجہ میں آپکے بیوی بچے جو آپ کے پاس آنے کی لئے دن گن رہے ہیں مزید تایخیر کا شکار ہونگے۔ دنیا مکافات عمل ہے جو دوسروں کی بہنوں بیٹیوں کے ساتھ کریں گے وہ اپنیوں کے آگے آئے گا

ہم میں سے کوئی خاتون بھی ڈر سہم کر کام کرنا نہیں چھوڑے گی!! نا ہی ہمیں کسی بکاؤ صحافی یا نام نہاد چودھری ملک گوندل راجوں کا تحفظ چاہئے بس گھنٹی بجائیں یہاں کا قانون ہمیں تحفظ دیتا ہے!!

 
 
 

Noticies

Diu, 24/05/2020

Després de complir un mes de dejunis avui celebrem festa de EID. Aquest any pel pandèmia de Corona Virus no podem fer cap festa or esdeveniment i tampoc podem abraçar-se i donar petons i salutacions. 


Dij, 23/04/2020

US DESITGEM UN FELIÇ SANT JORDI 2020


Diu, 29/03/2020

Ofrecemos Servicio Voluntario de Intèrprete Punjabi/Urdu/Castellano/Inglès en estos momentos deficiles #COVID 19 Tel. 647573583 y 632920411


Div, 13/03/2020

We are suspending Spanish classes in ACESOP for few days/weeks because of #COVID-19